Masarrat
Masarrat Urdu

ہندوستان کے عام انتخابات ملک کی انتخابی مشینری اور جمہوریت کی مضبوطی کی ایک مثال ہیں: مودی

  • 11 Jul 2024
  • مسرت ڈیسک
  • دنیا
Thumb

ویانا (آسٹریا)، 10 جولائی (مسرت ڈاٹ کام) وزیر اعظم نریندر مودی نے بدھ کو آسٹریا میں ہندوستانیوں اور ہندوستانی نسل کے لوگوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان میں حال ہی میں ہونے والے عام انتخابات میں 65 کروڑ لوگوں نے اپنے ووٹ کا حق استعمال کیا۔ انہوں نے کہا کہ اتنے بڑے الیکشن کے نتائج چند گھنٹوں میں واضح ہو گئے۔ جو ہماری انتخابی مشینری اور جمہوریت کی مضبوطی کو ظاہر کرتا ہے۔

اس موقع پر مسٹر مودی نے کہا کہ جمہوریت ہندوستان اور آسٹریا دونوں کو جوڑتی ہے۔
انہوں نے کہا کہ ہندوستان اور آسٹریا جغرافیائی طور پر دو مختلف سروں پر ہیں لیکن ہمارے درمیان بہت سی مماثلتیں ہیں۔ جمہوریت ہمارے دونوں ملکوں کو جوڑتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ آزادی، مساوات، تکثیریت اور قانون کی حکمرانی دونوں ممالک کی مشترکہ اقدار ہیں، ہم دونوں کثیر لسانی اور ثقافتی طور پر متنوع معاشرے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ کوئی ہندوستانی وزیر اعظم 41 سال بعد آسٹریا کا دورہ کر رہا ہے۔ یہ طویل انتظار ایک تاریخی وقت پر ختم ہوا جب دونوں ملک اپنی دوستی کے 75 سال منا رہے ہیں۔

ویانا میں ہندوستانی برادری سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر مودی نے کہا کہ وہ آسٹریا کے ساتھ ہندوستان کے تعلقات میں یہاں رہنے والی ہندوستانی برادری کے کردار کو اہم سمجھتے ہیں۔
وزیراعظم نے کہا کہ میرا ہمیشہ سے یہ خیال رہا ہے کہ دو ممالک کے درمیان تعلقات صرف حکومتیں قائم نہیں کرتیں، تعلقات کو مضبوط بنانے میں عوام کی شرکت بہت ضروری ہے۔
انہوں نے کہا کہ اسی لیے میں ان رشتوں کے لیے آپ سب کے کردار کو اہم سمجھتا ہوں۔
ہندوستان اور آسٹریا کے درمیان ثقافتی تعلقات کی گہری جڑوں کو اجاگر کرتے ہوئے مسٹر مودی نے کہا کہ تقریباً دو سو سال پہلے ویانا یونیورسٹی میں سنسکرت زبان پڑھائی جاتی تھی۔ 1880 میں اس یونیورسٹی میں مشرقی علم کے مطالعہ اور تدریس کے لیے ایک آزاد کرسی قائم کی گئی جس نے سنسکرت کے مطالعہ اور تدریس کو مزید فروغ دیا۔
وزیر اعظم جو اس میٹنگ میں موجود تھے، کو آج ویانا میں مشرقی علوم کے کچھ نامور اسکالرز سے ملاقات کا موقع ملا۔ ان سے بات کرنے سے صاف ظاہر ہوتا تھا کہ وہ ہندوستان کے قدیم علم میں گہری دلچسپی رکھتے ہیں۔
آسٹریا کے اپنے دو روزہ دورے کے دوسرے دن مسٹر مودی نے آج ویانا یونیورسٹی میں آسٹریا کے چار ممتاز مستشرقین اور ہندوستانی تاریخ کے اسکالرز سے ملاقات کی اور ان سے بات چیت کی۔ ان اسکالرز میں بدھ مت کے فلسفے اور ماہر لسانیات کے اسکالر ڈاکٹر برجٹ کیلنر، جدید جنوبی ایشیا کے اسکالر پروفیسر مارٹن گینزلے اور ساؤتھ ایشین اسٹڈیز کے شعبہ کے پروفیسر ڈاکٹر بورنگ لیروسچ اور ڈاکٹر کیرن پریجین ڈینگے شامل تھے۔
مسٹر مودی کے ساتھ ہندوستانی تاریخ، فلسفہ، آرٹ اور سنسکرت کے مختلف پہلوؤں پر تبادلہ خیال کیا اور ان سے آسٹریا میں ان مضامین کی تعلیم اور سیکھنے کی جڑوں کے بارے میں سوالات پوچھے۔
 

Ads