Masarrat
Masarrat Urdu

ملک انصاف کی تحریک چلانے اور ظلم کے خلا ف لڑنے والے سماجی کارکن سے محروم ہوگیا۔ ڈاکٹر ارون کمار

Thumb

 

نئی دہلی، 12ستمبر (مسرت نیوز) مشہور سماجی کارکن اور بندھوا مزدور ی کے خلاف تحریک چلانے والے سوامی اگنی ویش کے انتقال پر انتہائی رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے سب لوک پارٹی کے سربراہ اورسابق رکن پارلیمنٹ ڈاکٹر ارون کمار اور علی گڑھ مسلم یونیورسٹی الومنائی ایسوسی ایشن  مہاراشٹر کے صدر تنویر عالم نے کہاکہ ملک انصاف کی تحریک چلانے اور ظلم کے خلا ف لڑنے والے سماجی کارکن سے محروم ہوگیا۔


 آج یہاں جاری ایک تعزیتی بیان میں ڈکٹر ارون کمار نے کہاکہ سوامی جی نے اپنی پوری زندگی محروم طبقوں کو انصاف دلانے کے لئے وقف کردی تھی خواہ بندھوا مزدوروں کے خلاف تحریک چلانا ہو یا دوسرے ظلم کے خلاف لڑائی سب میں وہ  آگے آگے رہتے تھے۔ انہوں نے 1980میں بانڈیڈ لیببر لبریشن قائم کیا تھا اور بندھوا مزدوروں کو نجات دلانے کے لئے تحریک چلاتے رہے اور انہیں کامیابی بھی ملی۔وہ درحقیقت سوامی دیانند سرسوتی کے سچے پیروکار تھے اورآریہ سماج ورلڈ کونسل کے سربراہ رہ چکے تھے اور آریہ سماج کے بڑے لیڈر تھے۔انہوں نے 1970میں آریہ سبھا پارٹی قائم کی تھی اور اس کے بینر تلے ہریانہ اسمبلی کے لئے انتخاب بھی لڑا فتح یاب بھی ہوئے اور وزیر تعلیم کے طور پر انہوں نے بہترین خدمات پیش کی۔ انہوں نے کہاکہ انتقال سے ایک بہترین سماجی کارکن، حق و انصاف کے لئے لڑنے والے سے ملک محروم ہوگیا ہے۔


مسٹر تنویر عالم نے کہا کہ سوامی اگنی ویش کے انتقال کی وجہ سے تحریک چلانے والوں کو دھچکا پہنچا ہے۔ظلم و جبر کے خلاف تحریک چلانے والے ان سے تحریک و ترغیب حاصل کرتے تھے۔انہوں نے کہاکہ وہ ہمیشہ ظلم کے خلاف لڑتے ہوئے نظر آئے، خواہ بندھوا مزدوروں کے خلاف تحریک ہو یا سماج میں پھیلے عدم مساوات کا معاملہ ہر جگہ وہ نظر آئے۔ آخری عمر میں ماب لنچنگ کے خلاف وہ سامنے آئے، عورتوں کے خلاف زیادتی ہو یا قبائلیوں کے خلاف ظلم وہ وہاں پہنچ جاتے تھے۔ ظلم کے خلاف لڑنے کی وجہ سے جھارکھنڈ میں بی جے پی کی حکمرانی کے دوران ان پر بھگوا غنڈوں نے حملہ کیا تھا جس کی تصویریں کافی وائرل ہوئی تھیں۔ 
انہوں نے کہاکہ قومی شہریت (ترمیمی)قانون کے دوران شاہین باغ سمیت متعدد جگہ پر پہنچ کر انہوں نے مظاہرین کا حوصلہ بڑھایا تھا۔ انہوں نے 2014کے بعد حالیہ دنوں تک اقلیتوں اور کمزور طبقات پر ہونے والے مظالم کے خلاف میدان میں اترے تھے۔انہوں نے کہاکہ ان کے انتقال کی وجہ سے تحریک چلانے والوں کا بہت بڑا نقصان ہوا ہے اور سوامی جی کی سماجی خدمات کو ملک میں ہمیشہ یاد کیا جائے گا۔

Ads