Masarrat
Masarrat Urdu

بزمِ صدف کی کویت شاخ کاقیام،مشہور شاعر مسعود حساس صدر منتخب

Thumb

نئی دہلی /دوحہ4ستمبر (مسرت نیوز) بزم صدف انٹر نیشنل قطر کے کویت شاخ کاقیام عمل میں آیا ہے اور اس کا صدر مشہور شاعر مسعود حساس کو بنایا گیاہے۔ اس امر کی منظوری اردو زبان و ادب کی ہمہ گیر ترقی کے لیے سر گرم ادبی انجمن بزمِ صدف انٹر نیشنل کی کویت شاخ کی گورننگ کونسل نے دی ہے۔اس کے سرپرستان::مرزاعمر بیگ، محترمہ شاہجہاں جعفری حجاب،جعفر صمدانی،رانا اعجاز ایڈوکیٹ، عامر قدوائی،نائب صدرنسیم زاہد،جنرل سکریٹری صابر عمر،جوائینٹ سکریٹری،اظہار التسنیم،میڈیا سکریٹری ایوب خان نیزہ،خازن ابراہیم سنگے قاصد ہیں۔
بزمِ صدف کے چیر مین شہاب الدین احمدنے کویت کی اردو آبادی کے نمائندہ افراد کو اس ادارے سے منسلک ہوکر کے اپنی مادری زبان کے فروغ کے لیے کوششیں کرنے کو ایک نیک فال قرار دیا۔ انھوں نے اس بات کی توقع ظاہر کی کہ بزم ِ صدف کی دوسر ی شاخوں کی طرح کویت کی شاخ بھی اپنی نمایاں ادبی اور علمی شناخت قائم کرے گی۔مسعود حساس کی صدارت اور جناب صابر عمر کی سیکریٹری شپ میں توقع ہے کہ یہ ادارہ اپنی کامیابیوں کی نئی تاریخ لکھے گا۔


بزمِ صدف کے ڈائریکٹر پروفیسر صفدر امام قادری نے بتایا کہ آئند12ستمبرکو بزم صدف کی کویت شاخ کا تاسیسی پروگرام منعقد کیا جائے گا جس میں آن لائن عالمی مشاعرہ بھی شامل رہے گا۔کویت میں بزم صدف کے قیام کو نیک فال قرار دیتے ہوئے اس کے سرپرست اعلی صبیح بخاری، پروگرام  ڈائرکٹر احمد اشفاق، تاثیر کے چیف ایڈیٹر محمد گوہر، سینئر صحافی عابد انور اور دیگر حضرات نے مبارکباد پیش کی ہے۔
مرزا عمیر بیگ 
کویت یونیورسٹی میں سینیئر سائنٹیسٹ کے عہدے پہ فائز وہ قلمکار ہیں جنہوں نے اپنے افسانوں سے افسانوی کردار تخلیق کیے اور ان کی گونگی زبان کو بھی گویائی عطا کردی لکھنؤ شہر کے پروردہ مرزا عمیر بیگ اپنی تہذیب کی طرح نرم و نازک مزاج کے حامل ادب و آداب کے نقیب ملت کے غمگسار اردو ادب کے سپاہی اور قلم کے دھنی انسان ہیں ادب پروری میں پیش پیش رہنے والے بیگ صاحب نے شاعری کو انچھوئی محبوبہ تسلیم کیا اسلیے اظہارِ خاطر کے واسطے افسانہ کا انتخاب کیا اپ نے افسانوں میں گرد و پیش میں بکھری داستانوں کے کردار کو زمین سے اٹھا کے فرازِ عرش تک پہنچاکے بین السطور میں ارتقائ فلسفے کو اپنا نصب العین جانا یہی سبب ہے کہ آپ کے بیشتر کردار دہلیز.  گلی. نکڑ اور چوراہے سے ابتداء کرتے ہوئے ہوائی جہاز اور پنج ستارہ ہوٹل تک پہنچتے ہیں اور وہاں بھی اپنی تہذیب کی پاسداری کو واجبات شمار کرتے ہیں


شاہجہاں جعفری حجاب صاحبہ ان مستند و قوی ترین ادبامیں شامل ہیں جنہوں نے ہر صنفِ سخن پہ کتاب شائع کی ہے خواہ وہ مضامین ہوں غزلیات ہوں ڈرامہ یا ناول وغیرہ وغیرہ۔ آپ کویت بزمِ ادب کی صدر ہونے کے ساتھ فنکار گروپ کی سرکردہ رکن ہیں اور زائد از صدہا ڈراموں میں اپنی اداکاری کا لوہا منوا چکی ہیں۔محترمہ نے قبل از جنگِ خلیج کویت ریڈیو میں صداکاری کے فرائض انجام دیے جس نے اردو اور کویت کو قریب کرنے میں کلیدی کردار ادا کیا۔محترم عامر قدوائی صدر نشین انجمن تہذیبِ اردو،کویت غزل میں اس بانکے سجیلے اسلوب کا نام ہے جس میں معاشرے کی درست تشکیل کی رو بہت واضح نظر آتی ہے متعدد کتابوں کے خالق اور کویت کی سرزمین میں عالمی مشاعروں کی داغ بیل ڈالنے والے عامر قدوائی نے غنائیت سے بھر پور غزلیں کہی ہیں۔رانا اعجاز سہیل صدر نشین کویت پاک فرینڈ کلب پیشے سے وکیل استاد ہیں۔ ہمہ وقت ادب و آداب کے فروغ کیلیے کوشاں رہنے والے اس اکلوتے فرد نے کاروان کا کارنامہ انجام دیتے ہوئے کویت اور پاکستان کو اتنا قریب کیا کہ شیوخ و مشائخِ کویت نے باتفاق رائے انہیں متعدد حکومتی ایوارڈ سے سرفراز کیا۔جعفر صمدانی صدر نشین پاکستان عوامی سوسائٹی پیشے سے وکیل ہیں۔عالمی عدالت کے جیوری ممبر ہونے کے ساتھ متعدد کیس میں انسانیت کی بھر پور نمائندگی کر چکے ہیں۔ادب اور قانون کی کم ازکم آٹھ ضخیم کتابیں اردو اور انگلش میں تخلیق کرچکے ہیں۔
مسعود حساس کو بزمِ صدف، کویت کا صدر منتخب کیا گیا ہے۔ خلیج کا اولین صاحبِ دیوان مزید برآں اردو ادب کا وہ پہلا شخص جو ملکی سطح پہ اپنے تمام ترمعاصرین پہ منظوم خاکہ لکھ چکا ہے جسے 2014 میں دیوان کے ضمیمے کے طور پہ شائع کیا گیا۔ نسیم زاہد ریاضی آداب غزل اکیڈمی کے صدر پیشے سے علمِ معانی و بیان بدیع اور عروض کے ساتھ اردو زبان کے معلم ہیں۔ خلیجی سطح پہ یہ پہلے شخص ہیں جو معانی و بیان بدیع وغیرہ جیسے اھم ادبی فنون کی باضابطہ تعلیم دے رہے ہیں۔جنرل سکریٹری صابر عمر کویت نشاط ادبی جریدے کے مدیرِ اعلی ہیں۔ اچھے شاعر. صاحبِ کتاب شخصیت ہیں آپ کی علم دوستی ادب پروری بے مثال ہے۔اظہار التسنیم.  معروف شاعرگر واسلوبِ خاص کے حامل شاعر مرحوم تسنیم انصاری کی ادبی وراثت کے حقیقی امین ہیں۔کویت میں آپ کی خاموش ادب پروری جشنِ تسنیم کے بعد اظہر من الشمس ہوئی۔ ابراہیم سنگے قاصد ایک صاحبِ کتاب شاعر ہیں۔ایوب خان نسلِ نو کی آبیاری کررہے ہیں۔  کویت میں آپ شعری طنز کے مسلمہ شاعرہیں۔آپ کی انتھک کوششوں سے متعدد غریب بچوں نے آئی پی ایس،آئی اے ایس جیسے امتحانات میں کامیابی حاصل کی جو ہم سبھی کیلیے قابل فخر ہے۔
گذشتہ 28جنوری کو اس سے قبل بنگلا دیش کی شاخ کا قیام عمل میں آیا تھا۔ اس طرح ہندستان اور قطر کے علاوہ سعودی عرب، کینیڈا،متحدہ عرب امارات،جرمنی اوربرطانیہ میں  بزمِ صدف کی شاخیں قائم ہو چکی ہیں۔

Ads